Download http://bigtheme.net/joomla Free Templates Joomla! 3
Home / Cricket News / When will the team get rid of Ahmed Shahzad?

When will the team get rid of Ahmed Shahzad?

When will the team get rid of Ahmed Shahzad?

ٹیم کو احمد شہزاد سے چھٹکارا کب نصیب ہوگا؟

پاکستان کرکٹ ٹیم کی بیٹنگ لائن تو کافی عرصے سے ہی مسائل کا شکار تھی جس میں سرفہرست اوپننگ کا مسئلہ بھی تھا۔ لیکن اس پوزیشن پر پاکستانی سلیکٹرزاور ٹیم انتظامیہ کے تجربات درتجربات جاری ہیں جو اس عرصے میں 14 اوپننگ جوڑیاں بدل چکی ہے جو گزشتہ ورلڈکپ کے بعد کسی بھی ٹیم کی جانب سے آزمائی جانے والی سب سے زیادہ اوپننگ جوڑیاں ہیں مگر اتنے طبیبوں کو دکھانے کے بعد بھی مرض میں افاقہ نہ ہورہاہے تو پھر سمجھ لیں کہ کہیں نہ کہیں گڑبڑہورہی ہے۔ماسوائے بابراعظم،شعیب ملک اور کسی حد تک محمد حفیظ کے، کوئی پلیئرمستقل مزاجی سے پرفارم نہیں کررہا خصوصاً اوپنرز جدید دور کے اعتبار سے آغاز فراہم کرنے میں ناکام ہیں۔ اس عرصے میں اظہرعلی کے بعد فخرزمان اورامام الحق کی کارکردگی کو قابل اطمینان کہاجاسکتاہے کہ لیکن ٹیم منیجمنٹ سمیت کوئی بھی اظہرعلی کو ون ڈے سائیڈ میں نہیں دیکھنا چاہتا۔

پاکستان میں کھیلوں کے سب سے بڑے میگزین ” اسپورٹس لنک” میں اس ہفتے اوپنر احمد شہزاد کی ٹیم میں موجودگی پر’’نگاہ‘‘ ڈالتے ہوئے ان کی کارکردگی کاجائزہ پیش کیا گیا ہے

آج سے تقریباً9 سال قبل ون ڈے ڈیبیوکرنے والا احمدشہزاد آج بھی ٹیم میں ’’جگہ بنانے‘‘ کیلئے جدوجہد کررہاہے اور سلیکٹرزوٹیم انتظامیہ اُسے موقع درموقع دئیے جارہے ہیں حالانکہ یہ بات روزِ روشن کی طرح عیاں ہے کہ اُس کا انداز اور خودغرضانہ انداز جدید دور کی کرکٹ سے قطعاً میل نہیں کھاتا مگر نجانے سلیکٹرزاُن سے کونسا کارنامہ سرانجام دلوانا چاہتے ہیں جس کے بغیر پاکستان کی تاریخ مکمل ہی نہیں ہوگی۔

ورلڈکپ2015ء کے بعد جن چھ پاکستانی اوپنروں نے 100 سے زائد رنز بنائے ہیں ،اُن میں احمدشہزاد ہی واحد بلے باز ہے جس کی اوسط 39 سے نیچے ہے جو 24.56کی اوسط سے رنزبناسکاہے جبکہ ان اوپنروں میں سب سے کم اسٹرائک ریٹ بھی اُسی کاہی ہے۔

احمد شہزادنے محض اظہرعلی کے بعد بطوراوپنر سب سے زیادہ میچز

 کھیلے ہیں مگرزبردستی ’’ون ڈے اسپشلسٹ اوپنر‘‘بنائے جانے والے ’’موصوف‘‘ کے نام کے آگے محض دو ففٹیوں سمیت چالیس چوکے اور ایک چھکا درج ہے

 

ورلڈکپ2015ء کے بعد پاکستان ٹیم کی مجموعی اوپننگ شراکت اوسط 46.40اور رن ریٹ 5.29رنز فی اووررہاہے ۔اس دوران پاکستانی اوپنرز نے چار سنچریاں اور 13نصف سنچری شراکتیں قائم کی ہیں جو اس عرصے میں کسی بھی ٹیم کی جانب سے سب سے زیادہ اوپننگ ففٹی شراکتیں ہیں لیکن یہ اس سے بھی بہتر ہوسکتے تھے ، اگر ان میں احمد شہزاد شامل نہ ہوتے جیساکہ یہ چارٹ ثابت کررہاہے۔

 

About admin

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *